September 24, 2017
You can use WP menu builder to build menus

واشنگٹن (بی بی سی اپ ڈیٹ)امریکی جریدے ’’فوربس‘‘نے دنیا کے سب سے زیادہ پیسہ کمانے والے کھلاڑیوں کی تازہ فہرست جاری کی ہے۔ حال ہی میں چیمپئنز لیگ جیتنے والا کھلاڑی کرسٹیانو رونالڈو بدستور اس کرہٴ ارض پر سب سے زیادہ پیسہ کمانے والا کھلاڑی ہے۔تفصیلات کے مطابق گزشتہ 12 مہینوں کے دوران کرسٹیانو رونالڈو نے، جنہیں 4 مرتبہ دنیا کے بہترین فٹ بال کھلاڑی کا اعزاز مل چکا ہے، تقریباً 83 ملین یورو کمائے، 52 ملین یورو تنخواہوں اور انعامات کی مَد میں اور 31 ملین یورو اشتہارات کے ذریعے۔ فی گھنٹہ یہ رقم ساڑھے نو ہزار یورو بنتی ہے۔ 2016ء میں پرتگال کی قومی ٹیم کے ساتھ یورپی چیمپئن شپ میں کامیابی اُس کے کیریئر کا نقطہ عروج تھی۔امریکی قومی باسکٹ بال لیگ’’این بی اے‘‘کے سب سے مہنگے کھلاڑی لے برون جیمز یعنی ’’کِنگ جیمز‘‘ نے گزشتہ برس 77 ملین یورو کمائے۔ اشتہارات کی مَد میں اُس کی آمدنی (49 ملین یورو) جبکہ تنخواہ اور انعامی رقوم (28ملین یورو) سے کہیں زیادہ رہی۔ 2015ء میں کھیلوں کا ساز و سامان تیار کرنے والی کمپنی نائیکے نے اپنی تاریخ میں پہلی مرتبہ اسی کھلاڑی کے ساتھ اشتہارات کا ایک تا حیات معاہدہ طے کیا تھا۔بارسلونا ٹیم کے سُپر سٹار میسی نے 71 ملین یورو کمائے لیکن پانچ مرتبہ دنیا کے بہترین فُٹ بالر قرار پانے والے اس کھلاڑی کو ابھی 2016ء کے لیے اپنی آمدنی پر ٹیکس ادا کرنا ہے۔ صرف مَیسی ہی جانتے ہیں کہ اس رقم میں سے جائز رقم کتنی ہے۔ 2016ء میں اُنہیں ٹیکس فراڈ کے الزامات کا سامنا کرنا پڑا اور یہ سوالات کیے جانے لگے کہ اُس کی آمدنی کس حد تک جائز ہے۔سوئٹزرلینڈ کے ٹینس سٹار راجر فیڈرر، جو ریکارڈ اٹھارہ گرینڈ سلیم ٹورنامنٹ جیت چکا ہے، 2003ء میں قائم ہونے والی اپنی فاؤنڈیشن کے ذریعے اپنی والدہ کے آبائی وطن جنوبی افریقہ میں بچوں کے منصوبوں کے ساتھ مالی تعاون کر رہا ہے۔ گزشتہ سال ٹینس کے اس سُپر سٹار کھلاڑی کی مجموعی آمدنی ستاون ملین یورو کا محض ایک چھوٹا سا حصہ (5.33 ملین یورو) ہی تنخواہوں اور انعامی رقوم سے آیا۔کیوین ڈیورینٹ ’’گولڈن اسٹیٹ واریئرز‘‘ کےکھلاڑی کا قد 2 میٹر ہے اور وہ اور چیزوں کے ساتھ ساتھ اپنے ٹھیک ٹھیک نشانے کے لیے بھی مشہور ہے۔ اپنا کیریئر شروع کرنے کے بعد امریکی قومی باسکٹ بال لیگ ’’این بی اے‘‘کے اس کھلاڑی نے نائیکے کمپنی کے ساتھ 60 ملین ڈالر کے ایک معاہدے پر دستخط کیے تھے۔ گزشتہ سال اس کھلاڑی نے 54 ملین یورو کمائے۔اینڈریو لَک’’انڈیاناپولِس کولٹس‘‘ٹیم کے لیے کوارٹر بیک کی پوزیشن پر کھیلنے والے اس کھلاڑی نے جون 2016ء میں ’’نیشنل فُٹ بال لیگ‘‘کی تاریخ کے سب سے مہنگے کنٹریکٹ پر دستخط کیے تھے۔ اس معاہدے کے تحت اُسے اگلے 6برسوں میں مجموعی طور پر 124 ملین یورو ملیں گے۔ صرف گزشتہ برس ہی اس کھلاڑی نے 44 ملین یورو کمائے۔دنیا میں گولف کے کھیل کے سب سے زیادہ پیسہ کمانے والے کھلاڑی روری میکلوری کا تعلق شمالی آئرلینڈ سے ہے اور 2016ء میں اُس کی آمدنی چوالیس ملین یورو رہی، جس کا ایک بڑا حصہ (30 ملین یورو سالانہ) نائیکے کمپنی کے ساتھ اشتہارات کے معاہدے سے آیا۔ آج کل میکلوری عالمی درجہ بندی میں دوسرے نمبر پر ہیں تاہم 2016ء میں اُن کی آمدنی پہلے نمبر کے کھلاڑی ڈسٹن جونسن سے پانچ ملین یورو زیادہ رہی۔باسکٹ بال کےامریکی کھلاڑی اسٹیفن کری ’’بے بی فیسڈ اسیسن‘‘ کے نام سے زیادہ مشہور ہے اور اپنی طویل فاصلے کی شاٹس کے لیے خاص طور پر شہرت رکھتا ہے۔ گزشتہ بارہ مہینوں میں اس کھلاڑی نے بیالیس ملین یورو کمائے۔ ان میں سے اکتیس ملین اشتہاری معاہدوں سے آئے۔ این بی اے کے کھلاڑیوں کے لیے اتنی زیادہ کمائی کے واقعات عام ہیں۔امریکی باسکٹ بال کا اسٹار جیمز ہارڈن اپنی مخصوص داڑھی کی وجہ سے’’دی بیئرڈ‘‘(داڑھی) کے نام سے بھی مشہور ہے۔ گزشتہ برس اس نے تنخواہ اور انعامی رقوم کے طور پر 24 ملین یورو جمع کیے جبکہ اٹھارہ ملین یورو اُسے اشتہارات کے مختلف معاہدوں کی مَد میں حاصل ہوئے۔فارمولا وَن موٹر ریسنگ کے ڈرائیور لیوئس ہیملٹن تین مرتبہ عالمی چیمپئن شپ جیتنے میں کامیاب ہوئے۔ 2016ء میں اس برطانوی کھلاڑی کی مجموعی آمدنی 41 ملین یورو کے لگ بھگ رہی۔ مرسیڈیز ٹیم کے اس ڈرائیور کو محض تھوڑی سی آمدنی (7 ملین یورو) اشتہارات سے ملی جبکہ 34 ملین یورو اُسے تنخواہوں اور انعامی رقوم کی صورت میں حاصل ہوئے۔خواتین میں سب سے زیادہ آمدنی والی امریکی ٹینس کھلاڑی سیرینا ولیمز سب سے زیادہ آمدنی والے کھلاڑیوں کی فہرست میں 51 ویں نمبر پر ہیں۔ 2016ء میں اس امریکی کھلاڑی نے 24 ملین یورو کمائے۔ اس آمدنی کا دو تہائی سے زیادہ اشتہارات کے معاہدوں سے آیا۔ اس کھلاڑی نے بھی نائیکے کمپنی کے ساتھ معاہدہ کر رکھا ہے، اور سب سے زیادہ کمانے والا جرمن کھلاڑی سیباستیان فیٹل مسلسل چار مرتبہ فارمولا وَن عالمی چیمپئن بننے کا اعزاز رکھتے ہیں تاہم وہ گزشتہ برس اپنی آمدنی یعنی چونتیس ملین یورو کے ساتھ ’فوربس‘ کی فہرست میں محض چودہویں نمبر پر رہے۔ فیراری ٹیم کے اس ڈرائیور کو 2016ء میں اشتہارات کی مَد میں محض چار لاکھ 44 ہزار یورو حاصل ہو سکے۔

No Comments

You must be logged in to post a comment.