October 23, 2017
You can use WP menu builder to build menus

برلن (بی بی سی اپ ڈیٹ)برلن میں ایک 16 برس کی عراقی مہاجر لڑکی کو مسافر ٹرین میں ایک پرس ملا، جس میں 14000 یورو بھی تھے۔ مہاجر لڑکی کی ماں نے دوسرے دن تمام رقم سمیت بیگ پولیس کے حوالے کر دیا۔جرمن دار الحکومت برلن کی انڈر گراؤنڈ ٹرین میں سفر کرتے ہوئے عراق سے تعلق رکھنے والی ایک 16 برس کی مہاجر لڑکی کو ایک لاوارث پرس دکھائی دیا۔ اس لڑکی نے پرس اٹھا لیا لیکن اس کا کوئی وارث نہیں تھا۔ لڑکی نے پرس کھول کر دیکھا تو اس میں 14000 یورو نقدی موجود تھی۔ برلن کے ایک مہاجر کیمپ میں رہنے والی یہ نوجوان لڑکی پرس اپنے ساتھ گھر لے گئی۔اس سے اگلے دن مہاجر لڑکی اور اس کی والدہ برلن کے ایک پولیس سٹیشن پر چلی گئیں اور وہ بیگ پولیس کے حوالے کر دیا۔ برلن پولیس کی خاتون ترجمان نے بتایا کہ اس پرس میں تمام نقدی بھی موجود تھی جسے مہاجر لڑکی اور اس کی والدہ نے ایمانداری کے ساتھ پولیس کے حوالے کر دیا۔یہ پرس ایک 78 سالہ جرمن خاتون کی ملکیت تھا جو جمعہ کے روز انڈر گراؤنڈ ٹرین کے ذریعے سفر کر رہی تھی۔ ٹرین سے اترتے وقت وہ اپنا بیگ سیٹ پر ہی بھول گئی تھی۔ بعد ازاں جب اسے بیگ گم ہو جانے کا احساس ہوا تو اس نے ٹرین کے حکام سے رابطہ کیا۔ تاہم حکام اس کا بیگ تلاش کرنے میں ناکام رہے تھے۔مہاجر خاتون کی جانب سے پرس حوالے کیے جانے کے بعد بیگ کے اصل وارث کی تلاش کا مرحلہ مشکل ثابت نہ ہوا اور ساری رقم سمیت یہ گمشدہ بیگ واپس بزرگ خاتون کے پاس پہنچ گیا۔برلن کی پولیس نے اپنے ایک ٹوئٹر پیغام میں بتایا کہ سکول کی ایک لڑکی کو گمشدہ پرس ملا تھا جس میں 14000 یورو تھے۔ وہ بیگ اب اس کی اصل مالک تک پہنچا دیا گیا ہے جو پرس اور رقم مل جانے پر خوش ہیں۔

No Comments

You must be logged in to post a comment.